سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(181) پانچواں سوال

  • 8475
  • تاریخ اشاعت : 2013-12-16
  • مشاہدات : 555

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

پا نچویں:

﴿إِن هُوَ إِلّا عَبدٌ أَنعَمنا عَلَيهِ وَجَعَلنـهُ مَثَلًا لِبَنى إِسر‌ءيلَ ﴿٥٩﴾...سورة الزخرف

''وہ تو ہما رے ایسے بندے تھے جس پر ہم نے فضل کیا  اور بنی اسرا ئیل  لے لئے   ان کو (اپنی  قدرت  کا ) نمو نہ  بنا دیا  ''


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اس آیت کر یمہ سے تو یہ ثا بت ہو تا ہے  کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام  اللہ تعا لیٰ کے بندے تھے   اللہ تعا لیٰ نے انہیں  رسا لت سے نوا زا  وہ رب الٰہ نہیں بلکہ  وہ اللہ تعا لیٰ  کے کما ل  قدرت کی نشا نی ہے  خیرو بھلائی کے سلسلہ میں  کہ ایسا اعلی نمونہ ہے  جس کی  پیروی کی جا ئے  اور جس کے نقش قدم پر چلا جا ئے   اپنے معنی مفہوم کے اعتبا ر سے   یہ آیت پہلی آیت ہی کے مانند ہے  اس میں حضرت عیسی علیہ السلام   کی عمر  کی کو ئی  تحدید  نہیں ہے  بلکہ  اس کا بیا ن  اور اس کی تحد ید ہمیں  دیگر  نصو ص کتا ب و سنت  سے  ملتی   ہے  جیسا  کہ  قبل  ازیں  یہ بیا ن  کیا جا چکا ہے  ۔

هذا ما عندي والله اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ

ج1 ص38

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ