سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(585) مسجد میں تلاوت کے وقت آواز بلند کرنے کا حکم

  • 7950
  • تاریخ اشاعت : 2013-11-09
  • مشاہدات : 988

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا مسجد میں بلند آواز سے قرآن کی تلاوت کرنا جائز ہے۔ جبکہ اس وقت مسجد میں بعض نمازی نقل ادا کر رہے ہوں ؟ (ابراہیم۔ م۔ ضرمائ)


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

مسجد میں اس وقت بلند آواز سے قراء ت نہیں کرنا چاہیے، جب کہ اردگرد کے نمازی یا قرآن پڑھنے والے تشویش میں پڑ جائیں ۔ اسی طرح اگر قاری مسجد کے علاوہ کسی دوسری جگہ ہو اور اس کے اردگرد نمازی یا قاری ہوں تو بھی آواز بلند نہیں کرنا چاہیے۔ لہٰذا سنت یہ ہے کہ ان پر آواز بلند نہ کی جائے۔ جیسا کہ آپﷺ سے ثابت ہے کہ ایک دن آپ مسجد میں تشریف لائے تو کچھ لوگ نماز ادا کر رہے تھے اور کچھ بلند آواز سے قراء ت کر رہے تھے تو آپﷺ نے فرمایا:

((کُلُّکُم یُناجی اللّٰہَ؛ فلَا یُؤذِ بَعضُکم بعضًا))

’’تم میں ہر کوئی اللہ سے سرگوشی کر رہا ہے۔ لہٰذا کوئی دوسرے شخص کو ایذا نہ دے۔‘‘

 

 

فتاوی بن باز رحمہ اللہ

جلداول -صفحہ 216

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ