سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(69) تشہد میں سبابہ کوحرکت دینے سے متلعق سنت کیا ہے؟

  • 7793
  • تاریخ اشاعت : 2013-11-07
  • مشاہدات : 308

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

میں دیکھتا ہوں کہ تشہد پڑھمے کے دوران یعنی نمازی اپنی سبابہ کو دائیں بائں اوت بعض لوگ اوپرنیچے کی طرف حرکت دیتے ہیں کبھی یہ حرکات جلد جال اور متواتر ہوتی ہیں اور کبھی کچھ وقفہ کے بعد۔ بعض دوسرے اپنی انگلی اٹھاتے تو اہیں مگر اسے حرکت نہیں دیتے اور کچھ لوگ ہیں جو ایک بار بھی اپنی انگلی نہیں اٹھاتے۔ عبدالرزاق۔ح۔ ا۔ الدمام


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

تشہد کے وقت نمازی کے لیے سنت یہ ہے کہ اپنی سب انگلیاں بند رکھے، یعنی دائیں ہاتھ کی انگلیاں اور اللہ کے ذکر اور دا کے وقت سبابہ سے اشارے کر ے اور اسے حرکت دے۔ یہ حرکت خفیف اور توحید کے لیے ہو اور اگرچاہے تو چھنگی اور ساتھ والی انگلی دونوں کو بند رکھے اور درمیانی انگلی اور انگوٹھے سے حلقہ بنائے اور سبابہ سے اشارہ کرے۔ یہ دونوں صورتیں نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے صحیح طور پر ثابت ہیں ۔ رہا بایاں ہاتھ تو اسے اپنی بائیں ران پر رکھے ۔ ہاتھ کھلے اور انگلیاں قبلہ کی طرف پھیلی ہوئی ہوں اور اگر چاہے تو ہاتھ اپنے گھٹنے پر کھ لے ۔ یہ دونوں صورتیں نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے درست ثابت ہیں۔

ھذا ما عندي والله أعلم بالصواب

فتاویٰ ابن بازرحمہ اللہ

جلداول -صفحہ 82

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ