سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(128) ہم تشہداول میں تھےجب امام نے کھڑے ہونے کے لئے تکبیر کہی۔۔۔۔

  • 7493
  • تاریخ اشاعت : 2013-10-31
  • مشاہدات : 314

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ہم نماز مغرب باجماعت اداکررہے تھے کہ تیسری رکعت کے بعد تشہد پڑھنے کے دوران امام نے اللہ اکبر کہہ کرایک اوررکعت پڑھنے کے لئے کھڑا ہونا چاہا تو بعض نمازیوں کو صحیح صورت حال کا علم نہ ہوسکا اوروپ سجدہ میں چلے گئےکیونکہ انہوں نے یہ سمھجا کہ شاید امام نے سجدہ سہو کے لئے تکبیر کہی ہے اورجب انہوں نے سجدہ سے سراٹھایا تودیکھا کہ امام (سبحان اللہ) سن کر بیٹھ رہا ہے اورپھر امام نے دوسجدے کرلئے ،تواس نماز کے بارے میں کیا حکم ہے ؟بعض نمازیوں نے جو تیسرا سجدہ کیا تواس کے بارے میں کیا حکم ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

جس شخص نے یہ سمجھتے ہوئے سجدہ کرلیا کہ امام سجدہ سہو کرنے لگا ہے تو اس میں کوئی حرج نہیں ،اس کی نماز صحیح ہے کیونکہ اس نے جان بوجھ کر نماز میں اضافہ نہیں کیا بلکہ اپنے خیال کے مطابق اس نے امام کی متابعت ہی میں یہ سجدہ کیا ہے۔

 

مقالات وفتاویٰ ابن باز

صفحہ 242

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ