سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(122) کیافرض نماز میں دعا کی جاسکتی ہے

  • 7487
  • تاریخ اشاعت : 2013-10-31
  • مشاہدات : 687

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا نمازی کے لئے جائز ہے کہ وہ فرض نماز میں ارکان اداکرنے کے بعد دعا کرے یعنی مثلا سجدہ میں‘‘سبحان ربي الاعلي’’کےبعداس طرح کی دعا کرسکتا ہے کہ ‘‘اللهم اغفرلي وارحمني’’امیدہے مستفید فرماکر شکریہ کا موقعہ بخشیں گے۔؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

مومن کے لئے اس بات کی اجازت ہےکہ وہ نمازمیں نمازخواہ فرض ہویانفل دعا کےمقام پردعا مانگےاورنمازمیں دعاکامقام سجدہ،دونوں سجدوں کےدرمیان،تشہد اور نبی کریمﷺکی ذات گرامی پر درود بھیجنےکےبعد اورسلام سےقبل نمازکاآخری حصہ ہے۔حدیث سےثابت ہےکہ نبی کریمﷺدونوں سجدوں کےدرمیان مغفرت کےلئےدعافرمایاکرتےتھےاوراس مقام پر آپ یہ دعا پڑھاکرتےتھے:

 ( (اللهم اغفرلي وارحمني واهدني واجبرني وارزقني وعافني) )

‘‘اےاللہ!تومجھےمعاف کردےاورمجھ پررحم فرمااورمجھےہدایت دےاور میری بگڑی بنادےاورمجھےرزق عطافرمااورمجھےعافیت عطافرما۔’’

نبیﷺکاارشادگرامی ہے‘‘کہ رکوع میں اپنےپروردگارکی تعظیم بیان کرواورسجدہ میں خوب کوشش سےدعاءکروکیونکہ سجدہ میں کی گئی دعاءاس قابل ہےکہ اسےشرف قبولیت سےنوازاجائے۔’’ (صحیح مسلم)

امام مسلم نےروایت حضرت ابوہریرہؓ بیان کیا ہےکہ نبیﷺنےفرمایاکہ‘‘بندہ اپنےرب کےسب سےزیادہ قریب اس وقت ہوتاہے،جب وہ سجدہ میں ہوتاہے لہٰذا سجدہ کی حالت میں کثرت سےدعاءکیاکرو۔’’

صحیحین میں حضرت عبداللہ بن مسعودؓ سےروایت ہےکہ نبی کریمﷺنےجب انہیں تشہد سکھایاتوفرمایاکہ اس کےبعد آدمی جوچاہےدعاکرے۔ایک روایت میں الفاظ یہ ہیں‘‘اس کےبعد اسےجودعا سب سےزیادہ پسند ہو اسے منتخب کرکے دعاکرے۔’’اس موضوع کی اوربھی بہت سی احادیث ہیں جواس بات پردلالت کرتی ہیں کہ نمازکےان مقامات میں دعاءکرنامشروع ہے،مسلمان ان مقامات پرجوچاہےدعامانگ سکتاہے،خواہ اس کا تعلق آخرت سےہویادنیوی مصالح سے،بشرطیکہ گناہ یاقطع رحمی کی دعاءنہ ہواورافضل یہ ہےکہ ان دعاؤں کو کثرت کےساتھ مانگاجائےجونبی کریمﷺسے ثابت ہیں۔

 

مقالات وفتاویٰ ابن باز

صفحہ 238

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ