سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(118) تصویروالی گھڑی پہن کرنماز پڑھنے کے بارے میں کیا حکم ہے؟

  • 7483
  • تاریخ اشاعت : 2013-10-31
  • مشاہدات : 341

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

بعض گھڑیوں کے اندر کئی جانوروں کی تصویریں بنی ہوتی ہیں ،کیا ان گھڑیوں کو پہن کر نماز پڑھنا جائز ہے ؟نیز کیا ایسی گھڑی کے ساتھ نماز جائز ہے یا نہیں جس میں صلیب کا نشان بنا ہو؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اگر گھڑیوں میں تصویریں چھپی ہوں اورنظر نہ آتی ہوں توان میں نماز پڑھنے میں کوئی حرج نہیں اوراگرگھڑی کے اندرونی یا بیرونی جانب سے تصویریں نظرآتی ہوں تو پھر ان میں نماز جائز نہ ہوگی کیونکہ حدیث سے ثابت ہے کہ نبی کریمﷺنے حضرت علی رضی اللہ عنہ کوحکم دیا تھا کہ ‘‘کوئی تصویر نہ چھوڑو مگر اس کو مٹا دو۔’’اسی طرح جس گھڑی میں صلیب کا نشان بنا ہواس میں بھی نماز جائز نہیں ،الا یہ کہ صلیب کے نشان کو مٹا دیا جائے یا اس پر پینٹ پھیر دیا جائے کیونکہ نبی کریمﷺسے ثابت ہے کہ آپ جب بھی کسی چیز پر صلیب دیکھتے تو اسے توڑ دیتے اوربعض روایات میں الفاظ یہ ہیں کہ اسے مٹا دیتے۔

 

فتاویٰ ابن باز

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ