سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(56) زبان سےنماز کی نیت

  • 737
  • تاریخ اشاعت : 2012-05-21
  • مشاہدات : 788

سوال


السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

تکبیر اولی سے قبل نیت نماز ضروری ہے یا نہیں۔ کیانیت زبان سے ادا کی جائے ۔ جب نیت کے لئے آیت قرآن انی وجھت قبل از تکبیر اولی پڑھتے ہیں تواس آیت کا نیت کے لیے پڑھنا کیوں ناجائز ہے۔؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد! 

تکبیراولی سے پہلے دل سے نیت ضروری ہے زبان سے نیت ثابت نہیں۔ بلکہ نیت دل ہی کا فعل ہے نہ زبان کا۔ کیونکہ نیت کا معنی قصد اور ارادہ ہے۔ قصداور ارادہ دل کا فعل ہے اور انی وجهت نیت کے لیے نہیں پڑھی جاتی۔کیونکہ اس میں کسی خاص عبادت کا ذکر نہیں۔اور نیت خاص عبادت کی ہوتی ہے۔نیز انی وجهت کا تکبیراولی سےپہلے پڑھنا اس کاتسلی بخش کوئی ثبوت نہیں بلکہ بعض روایتوں سے تکبیراولی کے بعد پڑھنا ثابت ہے چنانچہ مشکوۃ’’باب یقرأبعد التکبیر‘‘میں وہ روایت موجود ہے۔پس صحیح بعد پڑھنا ہے۔ اور نیت پہلے ہوتی ہے تواس کا نیت کے لیے پڑھنا ثابت نہ ہوا۔

وباللہ التوفیق

فتاویٰ اہلحدیث

کتاب الصلوۃ،نمازکی کیفیت کا بیان، ج2 ص118 

محدث فتویٰ


ماخذ:مستند کتب فتاویٰ