سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(314) حد سے زیادہ مہر باندھنا اور پھر ادا نہ کرنا

  • 6867
  • تاریخ اشاعت : 2013-09-16
  • مشاہدات : 536

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

نام ونمود کی غرض سے نکاحوں میں حد سے زیادہ مہر باندھنا اور پھر ادا نہ کرنا کیسا ہے؟ اور جناب رسالت مآب ﷺ کی صاحبزادیوں کے مہر کس قدر مقرر کیے گئے تھے۔ ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

نام نمود کے لئے تو کوئی بھی کام جائز نہیں۔ بغیر نام ونمود کے مہر کی کثرت گو پسندیدہ نہیں لیکن حرام بھی نہیں۔ واتيتم احداهن قنطارا آپ ﷺ کی لڑکی حضرت فاطمۃ الذہرا رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا مہر آج کل کے حساب سے قریبا ایک سو اکتیس روپیہ تھا ۔ واللہ اعلم (یکم ربیع الاول 37ہجری)

 

فتاویٰ ثنائیہ

جلد 2 ص 277

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ