سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(778) طاقت کے باوجود حج بیت اللہ کو نہ جاوے..الخ

  • 6421
  • تاریخ اشاعت : 2013-08-12
  • مشاہدات : 436

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
جو مسلمان مالدارصاحب نصاب اپنے مال کی زکواۃ نہ دے اورطاقت کے باوجود حج بیت اللہ کو نہ جاوے تو کیا وہ مرے دم یہودی یا نصرانی ہوکر مرے گا۔ ؟  (عبد الروف)

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

جو مسلمان مالدارصاحب نصاب اپنے مال کی زکواۃ نہ دے اورطاقت کے باوجود حج بیت اللہ کو نہ جاوے تو کیا وہ مرے دم یہودی یا نصرانی ہوکر مرے گا۔ ؟  (عبد الروف)


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

حدیث شریف میں یوں آیا ہے۔ جو شخص باوجود فرض ہونے وسعت رکھنے اور مانع نہ ہونے کے حج نہ کرے۔ وہ چاہے یہودی ہوکر مرے یا عیسائی یہ خبر نہیں کہ وہ یہودی یا عیسائی ہوکرمرے گا۔ بلکہ ایک قسم کی ناراضگی ہے۔ زکواۃ نہ دینے کا گناہ علاوہ ہے۔  جس کی بابت قرآن مجید فیصلہ کررہا ہے۔  يَوْمَ يُحْمَىٰ عَلَيْهَا فِي نَارِ جَهَنَّمَ فَتُكْوَىٰ بِهَا جِبَاهُهُمْ الایۃ

یعنی جو لوگ مال جمع کرتے ہیں۔  او ر زکواۃ نہیں دیتے۔ ان کا مال تبا کر ان کو داغ دیا جائےگا۔  (اہل حدیث 19 شوال 1937ء)

 


فتاویٰ  ثنائیہ

جلد 01 ص 792

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ