سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(406) ایک شخص صلواہ تسبیح پڑھتا ہے آیا اسکو سنت پڑھنا ضروری ہے

  • 6203
  • تاریخ اشاعت : 2013-08-04
  • مشاہدات : 1005

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایک شخص جمعہ کے روز گھر سے مسجد میں آتے ہی چار رکعت صلواہ تسبیح  پڑھتا ہے اور دو رکععت کو جمعہ سے  پہلے نہیں پڑھتا۔ آیا اس کو دو رکعت سنت پڑھنا ضروری ہے۔ یا صلواۃ التسبیح؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

صلواۃ التسبیح کاثبوت کسی صحیح حدیث سے نہیں اور دوگانہ مسجد کا ثبوت صحیح روایت سے ہے یہاں تک کہ خطبہ کی حالت میں بھی پڑھ لینے کا حکم ہے۔

شرفیہ

صلواۃ التسبیح کی حدیث سنن ابی دائود۔ اور ابن ماجہ اور طبرانی و صحیح ابن خزیمہ ومستدرک  حاکم میں مختلف طرق و الفاظ سے مروی ہے۔ اور ابن خزیمہ اور حاکم نے اس کو صحیح کہا ہے اور بعض محدثین نے بھی اس کی تصحیح کی ہے جس کی تفصیل الترغیب والترہیب منزری میں لکھا ہے کہ محدثین کی ایک جماعت نے اس کی تصیح کی ہے  پس عدم صحت کا حکم ثابت نہیں اختلاف چیز ے دیگر است۔ تحقیق چیزے دیگر اور خظبہ جمعہ کے ساتھ  صرف دو سنتو  کے پڑھنے کا حکم ہے۔ زائد کا  نہیں وہ بھی تخفیف کے ساتھ  (ابوسعید شرف الدین دہلوی)

  ھذا ما عندي والله أعلم بالصواب

فتاویٰ  ثنائیہ امرتسری

جلد 01 ص 591

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ