سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(487) اگر امام قرات میں کسی جگہ بھول جائے

  • 6130
  • تاریخ اشاعت : 2013-07-30
  • مشاہدات : 477

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اگر امام قرات میں کسی جگہ بھول جائے۔ یا درمیان میں کوئی آیت چھوڑ جائے اور مقتدیوں سے لقمہ دینے والا کوئی نہ ہو تو سجدہ کرنا چاہیے یا نہیں؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

حدیث شریف میں ہر بھول پر سجدے کا حکم ہے۔ اس لئے قرات بھول جاوے  تو بھی سجدہ سہو کرے۔ (1)  (10 مارچ 38ء)

 -------------------------------------------------

1۔ اس پر تعاقب معہ جواب اگلے صفحے پر ملاحظہ ہو۔

 

فتاویٰ  ثنائیہ

جلد 01 ص 537

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ