سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(253) وتروں میں دعا قنوت

  • 6041
  • تاریخ اشاعت : 2013-07-28
  • مشاہدات : 608

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا فرماتے ہیں علماء دین اس مسئلہ میں کہ رمضان شریف میں اگ کوئی غیرمقلد اہل حدیث یا مقلدشافعی مذہب   تراویح کے بعدوتر کی نماز جماعت سے پڑھادے جس میں وہ تیسری رکعت میں خلاف طریقہ حنفیہ رکو کے  بعد کھڑے ہو کر ہاتھ اٹھاکردعا قنوت پڑھے پھر سجدے میں جاوے۔ توایسے تو ایسے امام کی اقتداء میں حنفی المذہب مقلد کی ماز درست ہوگی یا نہیں بینوا توجروا؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

نماز درست ہوگی اور حنفی المذہب اور حنفی المذہب مقلد کو امام کی متابعت قرارت قنوت میں کرنی چاہیے فقط واللہ اعلم بالصواب۔ حررہ عبد الصمد رحمانی مفتی خانقاہ رحمانیہ مونگیر

  ھذا ما عندي والله أعلم بالصواب

فتاویٰ  ثنائیہ امرتسری

جلد 01 ص 449

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ