سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(112) جو شخص سورت فاتحہ نہ پڑھ سکا اس کی وہ رکعت ہوئی یا نہیں؟

  • 5619
  • تاریخ اشاعت : 2013-07-06
  • مشاہدات : 477

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

جو شخص امام کے پیچھے کسی رکعت میں سورت فاتحہ نہ پڑھ سکا اس کی وہ رکعت ہوئی یا نہ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

بغیر سورت فاتحہ کے رکعت پوری نہیں ہوئی ہے۔ ہررکعت میں سورہ فاتحہ پڑھنا فرض ہے ، پس صورت مسئولہ میں اس شخص کی وہ رکعت نہیں ہوئی اس کودہرانا چاہیے۔ عن [1]ابی ہریرۃ ان رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  قال من ادرک الامام فی الرکوع فلیرکع معہ ولید الرکعۃ رواہ البخاری فی جزئ القرائ ۃ

نیل الاوطار میں ہے: قد [2]حکی ھذا المذھب البخاری فی جزئ القرائ ۃ عن کل من ذھب الی وجوب القرائ ۃ خلف الامام و حکاہ فی الفتح عن جماعۃ من الشافعیۃ و تواہ الشیخ تقی الدین السبکی الخ واللہ تعالیٰ اعلم۔

حررہ محمد عبدالحق ملتانی                                                          (سیدمحمد نذیر حسین) 


[1]   رسول اللہﷺ نے فرمایا: جس نے امام کو رکوع میں پایا وہ اس کے ساتھ رکعت ادا کرے اور اس رکعت کو لوٹائے۔

[2]   امام  بخاری نے جزء القراءۃ میں ہر اس آدمی سے ہی بیان کیا ہے ، جو امام کے پیچھے فاتحہ پڑھنے کاقائل ہے ، شوافع کی ایک جماعت کا یہی مذہب ہے اور سبکی نے اسکوقوی کہا ہے۔


فتاوی نذیریہ

جلد 01 

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ