سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(699) رکانہ کے درمیان کشتی لڑنے کا واقعہ

  • 5066
  • تاریخ اشاعت : 2024-05-23
  • مشاہدات : 1331

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اکثر خطیب رسول اللہ  صلی الله علیہ وسلم اور رکانہ کے درمیان کشتی لڑنے کا واقعہ بیان کرتے ہیں کیا یہ درست ہے؟

                                                                                   (محمد یونس شاکر ، نوشہرہ ورکاں)


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

یہ روایت کمزور ہے ، اس کی سند میں تین راوی مجہول ہیں۔ رکانہ ،  رضی اللہ عنہ کا بیٹا ، پوتا اور ابو الحسن عقلانی۔2

                                                                                               ۲۰؍۷؍۱۴۲۱ھ

 


قرآن وحدیث کی روشنی میں احکام ومسائل

جلد 02 ص 702

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ