سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(561) ایک بچی نے ایک عورت کا دودھ تین مرتبہ پیا ہے..الخ

  • 4929
  • تاریخ اشاعت : 2013-06-27
  • مشاہدات : 570

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایک بچی نے ایک عورت کا دودھ تین مرتبہ پیا ہے کیا اس بچی کا نکاح اس عورت کے بیٹے کے ساتھ ہوسکتا ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

سوال میں مذکور صورت اگرفی الواقع درست ہے تو اس بچی کا دودھ پلانے والی عورت کے بیٹے کے ساتھ نکاح درست ہے بشرطیکہ اس بچی اور اس بیٹے کا آپس میں کوئی اور محرم نکاح رشتہ موجود نہ ہو کیونکہ صحیح مسلم میں ہے: ’’ پانچ رضعات سے حرمت رضاعت ثابت ہوتی ہے۔‘‘ (ج:۱ ، ص:۴۶۹)اور مذکورہ بالا صورت مسئولہ میں صرف تین رضعات ہیں جو محرم نہیں۔ واللہ اعلم


قرآن وحدیث کی روشنی میں احکام ومسائل

جلد 02 ص 475

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ