سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(12) قضا شدہ روزے نابالغ سے رکھوانا

  • 4015
  • تاریخ اشاعت : 2013-06-13
  • مشاہدات : 391

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایک مرد یا عورت کے روزے کسی مجبوری کی وجہ سے رہ چکے ہیں تو کیا وہ نابالغ لڑکی یا لڑکے سے قضا شدہ روزے رکھوا سکتے ہیں؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

روزے قضا شدہ نہیں رکھوا سکتے۔ کیونکہ نابالغ کا روزہ نفل ہے۔ نفل بعینہ فرض نہیں بنتا۔ مثلاً ماہ رمضان میں کوئی عمرہ کرے تو اس کو حج کا ثواب ملتا ہے۔ لیکن حج فرض کے قائم مقام عمرہ نہیں ہو سکتا۔ حج اس کو علیحدہ کرنا پڑے گا۔ (عبد اللہ امر تسری روپڑی) (فتاویٰ اہل حدیث، ص ۵۰۵)


 

فتاویٰ علمائے حدیث

جلد 06 ص 95

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ