سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(13) (لولاک لماخلقت الا فلاک) کی حدیث صحیح ہے یا نہیں

  • 3795
  • تاریخ اشاعت : 2013-06-09
  • مشاہدات : 443

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته 
 (لولاک لماخلقت الا فلاک) کی حدیث صحیح ہے یا نہیں


السلام عليكم ورحمة الله وبركاته 

 (لولاک لماخلقت الا فلاک) کی حدیث صحیح ہے یا نہیں


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

:(حدیث لولاک لماخلقت الافلاک) بھی اسرائیل ہے انجیل برنابا میں البتہ ذکور ہے مگر امام صفانی حقی نے ’’الدرالملتقط‘‘ میں موضوع قرار دیا ہے نیز حنفیہ کے مائبہ ناز فتاویٰ جواہر انصتادیٰ میں عبدالرشید نے بھی اس کو بے اصل قرار دیاہے یہ حدیث کتب طبقات رابعہ میں نظر آتی ہے مگر اس کا کوئی اعتبار نہیں واللہ اعلم۔

الراقم عبدالجلیل السامرودی ۱۹۵۴ء ۔ اخبار اہلحدیث دہلی جنوری ۱۹۵۵ء


 

فتاویٰ علمائے حدیث

جلد 09 ص 59

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ