سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(19) یک امام صرف قرآن پڑھا ہوا ہے نہ ترجمہ جانتا ہے نہ حدیث

  • 3498
  • تاریخ اشاعت : 2013-06-05
  • مشاہدات : 711

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایک امام صرف قرآن پڑھا ہوا ہے نہ ترجمہ جانتا ہے نہ حدیث نہ فقہ۔بلکہ بسا اوقات قرآن بھی غلط پڑھتا ہے۔کیا اس کے پیچھے نماز پڑھ لینی جائز ہے یا نہیں۔؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اگر کوئی اس سے اچھا قرآن پڑھنے والا موجود ہو تو اسے امام نہ بنانا چاہیے۔عوام کو ضد نہیں کرنی چاہیے۔نہ امامت  ک سلسلے میں پارٹی بازی ہونی چاہیے۔بلک امام ہمیشہ ایسا انتخاب کرنا چاہیے۔جو زی علم ہو قرآن اچھا جانتا ہو۔اچھا پڑھتا ہو اورنیک اور پارسا بھی ہو۔ (اخبار اہل حدیث سوہدرہ جلد 8 ش 19)


 

فتاویٰ علمائے حدیث

جلد 12 ص 122

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ