سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(700) کھانا صرف داہنے ہاتھ سے کھانا چاہیے؟

  • 25815
  • تاریخ اشاعت : 2018-04-24
  • مشاہدات : 64

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

بغیر کسی عذر کے صرف سیدھے ہاتھ سے یعنی دائیں ہاتھ سے روٹی اس طرح کھانا کہ نہ تو روٹی توڑتے وقت دوسرا ہاتھ لگے اور نہ نوالہ بناتے وقت دوسرا ہاتھ لگائے۔ اس بارے میں وضاحت فرمائیے کہ کھاتے وقت دوسرا ہاتھ لگانا جائز ہے یا نہیں؟ (سیف اﷲ حقانی) (۲۹ اگست ۱۹۹۷ئ)


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

کھانا وغیرہ صرف داہنے ہاتھ سے کھانا چاہیے۔’’صحیح بخاری‘‘میں حدیث ہے:

’وَ کُلْ بِیَمِیْنِكَ ‘صحیح البخاری،بَابُ التَّسْمِیَةِ عَلَی الطَّعَامِ وَالأَکْلِ بِالیَمِینِ،رقم:۵۳۷۶

’’یعنی داہنے ہاتھ سے کھا۔‘‘

 البتہ عذر کی بناء پر دوسرا ہاتھ استعمال ہو سکتا ہے۔ فتح الباری: ۹/ ۵۲۳

     ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

فتاویٰ حافظ ثناء اللہ مدنی

جلد:3،کتاب اللباس:صفحہ:500

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ