سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(538) رفع الیدین سنت ہے؟

  • 24548
  • تاریخ اشاعت : 2018-02-21
  • مشاہدات : 73

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

بندہ رفع الیدین کو سنتِ رسولﷺ سمجھ کر نماز میں ادا کرتا ہے جب کہ والدین کا اصرار ہے کہ رفع الیدین چھوڑ دو مجھے اس صورت میں سنت رسولﷺ پر عمل کرنا چاہیے یا والدین کی اطاعت؟

چونکہ اسلامی تعلیمات میں اس قسم کی نظائر ملتی ہیں کہ حضورﷺ نے حج اور جہاد کے مواقع پر اطاعت وخدمت والدین کو ترجیح دی ہے۔ اب جب کہ رفع الیدین سنت ہے اور اطاعت و خدمت والدین فرض ہے مجھے کس پہلو کو ترجیح دینا چاہیے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

ان حالات میں والدین کی دلجوئی کے لئے ترک رفع کی گنجائش ہے۔ البتہ وقتاً فوقتاً بطریقِ احسن افہام و تفہیم کا سلسلہ جاری رہنا چاہیے۔ ﴿لَعَلَّ اللّٰهَ یُحدِثُ بَعدَ ذَلِكَ أَمرًا﴾

ہمارے بعض اسلاف تبلیغی مصلحت کے پیشِ نظرترکِ رفع الیدین پر عامل تھے۔ اس طرح ممکن ہے آپ بھی کوئی بہتر ناصحانہ کردار ادا کر سکیں۔﴿ وَاللّٰهُ یَهدِی مَن یّشَٓاء اِلٰی صِرَاطٍ مُّستَقِیم﴾

  ھذا ما عندي والله أعلم بالصواب

فتاویٰ حافظ ثناء اللہ مدنی

کتاب الصلوٰۃ:صفحہ:469

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ