سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(165) نماز جنازہ مسجد کے صحن میں پڑھنا

  • 2445
  • تاریخ اشاعت : 2013-02-15
  • مشاہدات : 1440

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
 نماز جنازہ مسجد کے صحن میں پڑھنا جائز ہے یا نہیں؟
___________________________________________

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

 نماز جنازہ مسجد کے صحن میں پڑھنا جائز ہے یا نہیں؟

___________________________________________

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

نماز جنازہ مسجد میں جائز ہے۔ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے خود پڑھا۔ حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ و حضرت عمر رضی اللہ عنہ کا جنازہ مسجد میں پڑھا گیا۔ واللہ اعلم
تشریح:… ازروائے حدیث صحیح کے مسجد میں نماز جنازہ پڑھنا جائز و درست ہے۔ منتقی الاخبار میں ہے:
عن عائشة انھا قالت لما توفی سعد بن أبی وقاص قالت ادخلوا به المسجد حتٰی اصلی علیه فانکروا ذلك علیھا فقالت لقد صلی اللہ علیه وسلم على ابنی بیضاء فی المسجد سھیل واخیه رواہ مسلم
 وفی روایت ما صلی رسول اللہ صلی اللہ علیه وسلم علی سھیل بن البضاء إلا فی جوف المسجد رواہ الجماعة البخاری
اس حدیث سے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا مسجد میں نماز جنازہ پڑھنا ثابت ہے۔ اور حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ اور حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے جنازہ کی نماز مسجد میں ہی پڑھی گئی تھی، اس سے ثابت ہوتا ہے۔ کہ مسجد میں نماز جنازہ کے درست اور جائز ہونے پر صحابہ رضی اللہ عنہم کا اجماع و اتفاق تھا، فتح الباری میں ہے۔
وقد روی ابن ابی شیبة وغیرہ أن عمر صلّى عل أبی بکر فی المسجد وان مھیبا صلّٰی علی عمر فی المسجد وفی روایة ووضعت الجنازة فی المسجد تجاہ المنبرو ھذا یقتضی الاجماع علی جواز ذلك الخ (حررہ محمد یوسف عفی عنہ ، سید نذیر حسین، فتاویٰ نذیریہ ج۱ ص ۴۰۳)

قرآن وحدیث کی روشنی میں احکام ومسائل

جلد 02

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ