سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(183) کیا ایک زمین میں عشر و خراج جمع ہو سکتے ہیں؟

  • 22948
  • تاریخ اشاعت : 2017-09-25
  • مشاہدات : 760

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

زمین ہندوستان کی عشری ہے یا خراجی اور عشر وخراج جمع ہوسکتے ہیں ایک قطعہ زمین میں یا نہیں؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

ہر زمین کی پیداوار میں بشرط نصاب ہر مسلمان مالک پیداوار پر عشر یا نصف عشر جیسی صورت ہو،واجب ہے ،خواہ زمین مذکورہ مملوکہ مالک پیداوار ہو یا نہ ہو۔مملوکیت کی تخصیص بلامخصص ہے ،دلائل وجوب عشر قید مملوکیت سے معریٰ ہیں،اسی طرح زمین مذکور خراجی ہو یا غیر خراجی،اس کی قید بھی بلادلیل ہے اور حدیث:

"لا يجتمع عشر وخراج في ارض مسلم"

"یعنی کسی مسلمان کی کسی ایک ہی زمین میں عشر اور خراج دونوں ایک ساتھ جمع نہیں ہوتے"صالح احتجاج نہیں ہے۔[1]

ان سب امور کے دلائل کتاب وسنت میں موجود اور تحریرات اہل علم میں مسطور وشائع ہیں۔لہذا صرف ان امور کے ذکر پر اکتفا کیا گیا اور ذکر دلائل سے قطع نظر رکھا گیا ۔واللہ اعلم بالصواب۔


[1] ۔نصب الرایہ (3/442) اس حدیث پر تفصیلی نقد وتبصرہ اگلے فتوے میں ملاحظہ کریں۔

 ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

مجموعہ فتاویٰ عبداللہ غازی پوری

کتاب الزکاۃ والصدقات ،صفحہ:358

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ