سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(5) قبرستان میں سلام کہنا

  • 21770
  • تاریخ اشاعت : 2024-04-15
  • مشاہدات : 838

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا قبرستان میں جا کر"السَّلَامُ عَلَيْكُمْ دَارَ قَوْمٍ مُؤْمِنِينَ" کہنا اس بات کے منافی نہیں کہ مردے سن نہیں سکتے؟(فتاویٰ الامارات۔84)


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اس طرح کے سلام سے یہ مراد نہیں کہ مردے سنتے ہیں۔بلکہ یہ تو عربی زبان کا اسلوب ہے۔جیسا کہ صحابہ کرام رضوان اللہ عنھم اجمعین  نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم  کے زمانے میں تشہد میں"السلام عليك أيها النبي ورحمة الله وبركاته"کہا کرتے تھے۔کہاکرتے تھے۔لیکن اس سے قطعاً یہ مراد نہیں کہ وہ جب بھی نماز کے دوران سلام بھیجتے ہیں،نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم  ان کا سلام سنتے ہیں،جبکہ وہ لوگ مختلف مقامات میں نماز پڑھتے تھے۔

ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

فتاویٰ البانیہ

عقیدہ کے مسائل صفحہ:80

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ