سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(643) تعویذ اور دم کی شرعی حیثیت

  • 2101
  • تاریخ اشاعت : 2012-09-11
  • مشاہدات : 1476

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
اسلام میں تعویذ کی شرعی حیثیت کیا ہے ؟ حدیث شریف میں تمیمہ لگانے کو شرک کہا گیا ہے اس تمیمہ سے کیا مراد ہے ؟ کیا تعویذ بدعت کے زمرے میں تو نہیں آتا؟

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اسلام میں تعویذ کی شرعی حیثیت کیا ہے ؟ حدیث شریف میں تمیمہ لگانے کو شرک کہا گیا ہے اس تمیمہ سے کیا مراد ہے ؟ کیا تعویذ بدعت کے زمرے میں تو نہیں آتا؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد! 

تعویذ رسول اللہ ﷺ سے ثابت نہیں۔ رہا تمیمہ کا معنی تو اس سلسلہ میں صاحب قاموس لکھتے ہیں :

«وَالتَّمِيْمُ التَّامُ الْخَلْقِ وَالشَّدِيْدُ وَجَمْعُ تَمِيْمَةٍ کَالتَّمَائِمِ لِخَرَزَةِ رَقْطَاءٍ تُنْظَمُ فِی السَّيْرِ ثُمَّ يُعْقَدُ فِی الْعُنُقِ»

’’اورتمیم کا معنی ہے پورے قد وقامت والا اور مضبوط اور تمیمہ کی جمع ہے تمائم کی طرح اور تمیمہ اس دھاری دار منکے کو کہا جاتا ہے جس کو تسمہ میں پرویا جاتا ہے پھر گردن میں باندھا جاتا ہے‘‘

وباللہ التوفیق

احکام و مسائل

تعویذ اور دم کے مسائل ج1ص 463

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ

ABC