سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(392) پندرہ شعبان کا روزہ رکھنا

  • 1848
  • تاریخ اشاعت : 2012-08-28
  • مشاہدات : 1276

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
پندرہ شعبان کا روزہ رکھا جائے اگر پندرہ شعبان کو روزہ نہ رکھے تو اس کی قضاء رمضان کے بعد دے کیا یہ حدیث ٹھیک ہے؟

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

پندرہ شعبان کا روزہ رکھا جائے اگر پندرہ شعبان کو روزہ نہ رکھے تو اس کی قضاء رمضان کے بعد دے کیا یہ حدیث ٹھیک ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

پندرہ شعبان کا روزہ بہ نیت شب برات تو ثابت نہیں اس سلسلہ میں ابن ماجہ میں ایک روایت مرفوعہ ہے وہ ضعیف ہے قابل احتجاج نہیں ہاں صحیح احادیث میں وارد ہے کہ رسول اللہﷺ شعبان کے روزے رکھا کرتے تھے پھر ایام بیض تیرہ چودہ اور پندرہ تین روزے ہر ماہ رکھنے کے متعلق بھی حدیث میں ثبوت موجود ہے تو اس طرح پندرہ شعبان کا روزہ رکھنا درست ہے یہ روزہ نفل ہے اور نفل کی قضاء بھی نفل ہوتی ہے اگر قضاء دینا چاہے تو رمضان سے قبل یا بعد دونوں طرح درست ہے ۔

وباللہ التوفیق

احکام و مسائل

روزوں کے مسائل ج1ص 281

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ