سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

نیکی کرکے دل کا خوش ہونا

  • 184
  • تاریخ اشاعت : 2011-12-06
  • مشاہدات : 608

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اگر نیکی کر کے دل خوش ہو اور گناہ کر کے دل خوش نہ ہو تو ایسی کیفیت کو کیا کہتے ہیں۔؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

جواب: ایسی کیفیت کو ایمان کہتے ہیں اور ایسا شخص مومن ہے۔ ایک روایت کے الفاظ ہیں:

«عَنْ أَبِي أُمَامَةَ قَالَ قَالَ رَجُلٌ يَا رَسُولَ اللَّهِ مَا الْإِيمَانُ قَالَ إِذَا سَرَّتْكَ حَسَنَتُكَ وَسَاءَتْكَ سَيِّئَتُكَ فَأَنْتَ مُؤْمِنٌ فَقَالَ يَا رَسُولَ اللَّهِ فَمَا الْإِثْمُ قَالَ إِذَا حَاكَ فِي صَدْرِكَ شَيْءٌ فَدَعْهُ»(مسند احمد،جلد ٣٦، ص٣٥٧، موسسہ الرسالہ)

حضرت ابو امامہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک شخص نے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم سے سوال کیا کہ ایمان کسے کہتے ہیں؟آپ نےفرمایا؛ جب تجھے نیکی سے خوشی ہو اور برائی سے تنگی ہو تو تو مومن ہے۔ اس شخص نے کہا ؛ اے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم! گناہ کیا ہے۔ آپ نے کہا: جب تیرے سینے میں کوئی شیئ کھٹکے تو اسے چھوڑ دے۔

 ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

محدث فتوی

فتوی کمیٹی

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ