سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(659) ہوائی جہاز میں نماز

  • 16923
  • تاریخ اشاعت : 2016-06-22
  • مشاہدات : 376

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

جب طیا ر ہ فضا میں ہو اور نماز کا وقت ہو جا ئے توکیا طیا ر ہ میں نماز جا ئز ہے ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!
جب نماز کے وقت کے ختم ہو جا نے کا اند یشہ ہو مثلا ً یہ کہ صبح کی نماز پڑ ھنے سے پہلے سو رج کے طلو ع اور نماز عصر پڑھنے سے پہلے سورج کے غرو ب ہو نے کا اندیشہ ہو تو طیا رہ میں نماز پڑ ھنا جا ئز ہے اگر طیا رہ میں کھڑے ہو کر نماز پڑھنے  کی جگہ ہو تو کھڑا ہو کر نماز پڑھ رہا ہے اور اگر  ایسی کو ئی جگہ نہ ہو تو اپنی نشست پر بیٹھے بیٹھے اشا رہ سے نماز پرھ لے اور سجدہ مین رکو ع کی نسبت زیا دہ سر جکا ئے اور اگر نماز ایسی ہو جسے جمع کر کے پڑھا جا سکتا ہو تو اسے دوسری نماز کے سا تھ جمع کر کے طیارہ سے اترنے کے بعد پڑھ لے لیکن اگر یہ خدشہ ہو کہ طیا رہ کے اترنے سے پہلے دونوں نمازوں کا وقت ختم ہو جا ئے گا مثلاً ظہر اور عصر کی نماز کرپڑھنے سے پہلے سو رج غرو ب ہو جا ئے یا مغرب اور عشا ء کی نماز وں کے پر ھنے سے پہلے فجر طلوع ہو جا ئے گی تو پھر ان نماز وں کو مؤخر کر نا جا ئز نہیں بلکہ ان طیا رہ کے اندر ہی خوا ہ اشا رہ کے سا تھ وقت پر ادا کر نا چا ہیے ۔(شیخ ابن جبر ین رحمۃ اللہ علیہ )
ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ :جلد1

صفحہ نمبر 523

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ