سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(651) مقیم طالب علم کے لئے تعلیمی پیریڈ کی وجہ سے نمازوں کو جمع کرنا

  • 16915
  • تاریخ اشاعت : 2016-06-22
  • مشاہدات : 355

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا ہما رے لئےدو نماز وں کو جمع کر کے پڑھنا جا ئز ہے جب کے ہم شہر میں مقیم ہیں اور تعلیمی ادارے میں زیر تعلیم ہو نے کی وجہ سے پیریڈ کو چھو ڑ کر جا نا ممکن نہیں ؟ اور کیا یہ جا ئز ہے کہ ہم اس حدیث کو دلیل بنا لیں کہ نبی کر یم صلی اللہ علیہ وسلم نے مدینہ میں سفر با ر ش اور بیما ری وغیرہ کے عذر کے بغیر بھی نماز جمع کر کے پڑھی ہے یا ہما رے لئے یہ ضروری ہے کہ یہ پیریڈ کو چھو ڑ کر نما زکے لئے مسجد میں چلے جا ئیں ۔؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!
آپ کے لئے ضروری یہ ہے کہ پا نچوں فرض نمازوں کو ان کے اوقات میں ادا کر یں پڑھا ئی کو ایسا عذر قرار نہیں دیا جا سکتا کہ جس کی وجہ سے نماز مؤخر کر کے پڑ ھنے کی اجازت ہو جس حدیث کی طرف آپ نے اشارہ کیا ہے وہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے متوا تر اور مسلسل عمل کے خلاف ہے لہذا ضروری ہے کہ تعلیمی اوقات کو اس طرح ترتیب دو کہ نماز کو ان کے اقاوت میں ادا کر نا ممکن ہو ۔ (فتوی کمیٹی)
ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ :جلد1

صفحہ نمبر 519

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ