سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(308)جزیرہ عرب میں مشرک وکافر کا داخلہ منع ہے

  • 16764
  • تاریخ اشاعت : 2016-06-19
  • مشاہدات : 201

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا کسی مسلمان کے لئے (جزیرئہ عرب) میں ایک بے دین غیر مسلم شخص کو بطور خادم یا ڈرائیور ملازم رکھنا جائز ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

مسلمان کے لئے مناسب نہیں کہ جزیرئہ عرب میں کسی کافر کو بطور خادم یاڈرائیور نوکر رکھے۔ کیونکہ رسول اللہﷺ نے جزیرئہ عرب سے مشرکین کو نکالنے کا حکم دیا تھا اور ان کو ملازم رکھنے سے یہ لازم آتا ہے کہ جسے رسول اللہہﷺ نے دور کیا ہم اسے قریب کریں اور جسے حضورﷺ نے ناقابل اعتماد سمجھا ہم اسے امین سمجھیں۔ ان کو ملازم رکھنے سے دوسرے بھی بہت سے مفاسد پیدا ہوتے ہیں۔

ھذا ما عندي واللہ أعلم بالصواب

فتاویٰ دارالسلام

ج 1

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ