سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(86)جب نمازی یہ محسوس کرے کہ اس سے کوئی چیز نکلی ہے تو کیا اس کی نماز باطل ہو جائے گی؟

  • 16353
  • تاریخ اشاعت : 2016-06-13
  • مشاہدات : 486

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

جب میں نماز کے لیے وضو کرتا ہوں تو مجھے وضو کے دوران ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے ذکر سے کوئی چیز نکلتی ہے۔ کیا اس صورت میں ناپاک ہو جاتا ہوں یا نہیں؟ اور جب میں نماز کی حالت میں یہی بات محسوس کروں تو میری نماز باطل ہو جائے گی یا نہیں؟

ابراہیم۔ س۔ منطقہ الجنوب


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

نمازی کا یہ احساس کہ اس کے آگے یا پیچھے سے کوئی چیز نکلی ہے، اس کے وضو کو باطل نہیں کرتا۔ اس کی طرف توجہ نہ کرے کیونکہ یہ شیطانی وسوسہ ہوتا ہے۔ چنانچہ نبیﷺ کی صحیح حدیث سے ثابت ہے کہ آپﷺ سے اسی بات کے متعلق پوچھا گیا تو آپ نے فرمایا: ’’جب تک آواز نہ سن لے یا بو نہ پا لے اپنی نماز وغیرہ سے نہ پھرے۔‘‘

اس حدیث کی صحت پر شیخین کا اتفاق ہے۔

    ھذا ما عندي والله أعلم بالصواب

فتاویٰ دارالسلام

ج 1

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ