سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(154) معذور آدمی کی امامت

  • 1610
  • تاریخ اشاعت : 2012-07-23
  • مشاہدات : 994

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

 ہَلْ یَؤُمُّ الرَّجُلُ الْمَعْذُوْرُ الَّذِیْ یَقْطُرُ مِنْہُ الْبَوْلُ وَالْحَالُ اَنَّہُ لَیْسَ فِیْ قَوْمِہِ رَجُلٌ اَکْثَرَ حِفْظًا لِلْقُرْآنِ وَلاَ اَعْلَمَ بِالسُّنَّةِ مِنْہُ

’’کیا معذور آدمی امامت کروا سکتا ہے جس کے پیشاب کے قطرے گرتے ہوں اور حالت یہ ہو کہ قوم میں اس سے زیادہ نہ کسی کو قرآن یاد ہے اور نہ ہی کوئی سنت کا عالم ہے‘‘؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد! 

یَجُوْزُ لٰکِنَّ الْاَوْلٰی وَالْاَفْضَلَ اَنْ یَؤُمَّ غَیْرُہُ

’’جائز ہے لیکن بہتر اور افضل یہ ہے کہ کوئی اور جماعت کروائے‘‘

    ھذا ما عندي والله أعلم بالصواب

احکام و مسائل

نماز کا بیان ج1ص 139

محدث فتویٰ

 

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ