سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(153)تفسیر ابن عباس

  • 14939
  • تاریخ اشاعت : 2016-03-30
  • مشاہدات : 415

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
سیدناابن عباس رضی اللہ عنہ سےایک تفسیرمنسوب ہے جوکہ تفسیرابن عباس کےنام سےمشہورہےاس کی اسنادی حیثیت کیا ہے؟

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

سیدناابن عباس رضی اللہ عنہ سےایک تفسیرمنسوب ہے جوکہ تفسیرابن عباس کےنام سےمشہورہےاس کی اسنادی حیثیت کیا ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

تفسیرابن عباس کی حقیقت یہ ہے کہ اس کی سندسلسلۃ الکذب ہے اس کی سند میں ایک راوی محمدبن مروان السدی ہے جو کہ متہم بالکذب راوی ہےاوریہ سدی محمدبن السائب الکلبی سےروایت بیان کرتا ہےاوریہ بھی رافضی اورمتہم بالکذب ہےاس طرح کلبی ابوصالح باذام سےروایت بیان کرتا ہے اوریہ بھی متروک راوی ہے۔

علاوہ  ازیں محدثین کرام رحمہم اللہ کی تریحات کےمطابق باذام نے ابن عباس رضی اللہ عنہ سےکچھ نہیں سنالہذایہ سندبےکاراورداھی تباہی ہے اس لیے اس سےوہی شخص استدلال لےگاجسےعلم کاکچھ حصہ بھی نہیں ملا۔
ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ راشدیہ

صفحہ نمبر 548

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ

ABC