سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(115) قبلہ کی طرف پاؤں کرنے کا حکم

  • 14218
  • تاریخ اشاعت : 2015-12-22
  • مشاہدات : 513

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا فرماتے ہیں علمائے دین کی جگہ کی تنگی کی وجہ سے قبلہ کی طرف اگر پاؤں کر کے سویا جائے تو کیا آدمی گناہ گارہوگا؟ (سائل: محمد تحسین لاہور)


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

قبلہ کی تعظیم وتکریم اور اس کا ادب واحترام ضروری ہے۔ رسول اللہﷺ نے اس امام کو منصب امامت سے برخاست کر دیا تھا جس نے قبلہ کی طرف تھوک دیا تھا۔ (مشکوٰۃ) تاہم بامر مجبوری قبلہ کی طرف پاؤں کر لیے جائیں تو شاید مضائقہ نہ ہو بشرطیکہ قبلہ کی توہین اور بےادبی مقصود نہ ہو۔ آخر حجاج اور عمرہ کرنے والےبھی بیت اللہ کا طواف کرتے ہیں۔ لیکن حتیٰ الامکان ایسا کرنامناسب نہیں۔ کیونکہ اس میں سوئے ادبی کا پہلو بظاہر نمایاں ہے۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ محمدیہ

ج1ص392

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ