سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(265) ٹیلی فون پر نکاح کرنا جائز ہے؟

  • 14023
  • تاریخ اشاعت : 2015-06-15
  • مشاہدات : 889

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

مغربی جرمنی سے نثار احمد پوچھتے ہیں کیا ٹیلی فون پر نکاح جائز ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

ٹیلی فون پر نکاح کے جواز یا عدم جوا ز سے پہلے  صحت نکاح کےسلسلے میں چند باتوں کا  جاننا ضروری ہے اور وہ ہیں ایجاب و قبول ۔ دو گواہ  اور حق مہر اور ولی کاہونا۔ اب اگر فون کے ذریعہ یہ ساری شرطیں پوری کی جاسکتی ہیں تو نکاح درست ہوگا اور اگر فون پر ان شرطوں کا پورا کرنا ممکن نہیں تو پھر نکاح صحیح  نہ ہوگا اور اس میں اہم ذمہ داری نکاح کرنے والے کی ہے اگروہ گواہوں کے سامنے فون پر ایجاب وقبول کروالینے پر مطمئن ہے اور لڑکی یا لڑکے  کی آواز فون پر پہچاننے  کی صلاحیت رکھتا ہے یا دو گواہ آواز پہچان کر ایجاب و قبول کی تصدیق  کردیتے ہیں تو نکاح درست ہوگا۔ مگر ایجاب وقبول کی صحیح  اور یقینی شکل کے بغیر فون پر نکاح نہیں کیاجاسکتا اور ایسے معاملات میں احتیاط ضروری  اور بہتر ہے۔ کیونکہ اگر مطلقاً یہ دروازہ کھول دیا جائے تو اس سے بےشمار خرابیاں اور مسائل پیدا ہونے کا اندیشہ ہے اس لئے یہ ذمہ داری نکاح کرنے یا نکاح کی رجسٹریشن  کرنے والے کی ہےو ہ کس طرح شرائط نکاح کی تکمیل کرکے فون پر نکاح کرواسکتا ہے۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ صراط مستقیم

ص373

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ