سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(207) جانوروں کے جسم کا کون سا حصہ کھانا حرام ہے

  • 136
  • تاریخ اشاعت : 2011-12-05
  • مشاہدات : 2763

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

جانوروں کے جسم کے کون سے حصّے کھانا حرام ہے یا مکروہ ہیں۔؟  کیا ہم جانوروں کا دل کھا سکتے ہے۔؟


 

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

شیخ صالح المنجد سے اس بارے جب سوال ہوا تو انہوں نے ذبیحہ کے تمام اعضاء کے کھانے کو مباح قرار دیا ہے۔

ان سے پوچھا گیا کہ کیا ذبیحہ کے خصیتین کھانا جائز ہے۔؟

تو انہوں نے جواب دیا کہ ذبیحہ کےخصیتین کھانا جائز ہے، کیونکہ ان کے عدم جواز پر کوئی دلیل نہیں ہے اور ان میں اصل اباحت ہے۔ ’مدونہ“ میں ہے کہ گوشت کے ساتھ ملی ہوئی چربی،جگر،معدہ یااوجھڑی،دل،پھیپھڑے،تلی،گرد ے،گردن،خصیتین یا کپورے،پائے اور سری وغیرہ کا حکم وہی ہے جو گوشت کا ہے۔

 ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ علمائے حدیث

جلد 2 کتاب الصلوۃ


ماخذ:مستند کتب فتاویٰ