سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(316) شادی میں ’’ نیدرہ‘‘ لینا

  • 13037
  • تاریخ اشاعت : 2014-08-31
  • مشاہدات : 819

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

آج کل  دعوت  ولیمہ  آئے  دن ہو تی  رہتی ہے  وہاں " نیدرہ " لیا جا تا ہے  یعنی کھا نا کھا نے  کے بعد  راستے  میں میز کر سی  لگا  کر لو گو ں  سے پیسے وصل کئے جا تے  ہیں  جو با قا عدہ  لکھے  جا تے ہیں  لو گ  مجبو راً 100/ سے /500/1000تک  کچھ  زیادہ  دیکھا  دیکھی  دیتے ہیں  نہ دینے  والے  کو برا  بھلا  کہا جا تا ہے  کیا یہ جا ئز  ہے ؟ کیا یہ صورت  مذکو رہ  با لا  ہو نے  پر بھی  یہ ولیمہ  ہے ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

مذکو رہ  با لا  رسم  کا شر یعت  میں کو ئی  و جو د نہیں  لہذا  اس سے  بچنا  چا ہیے  البتہ  حسب  تو قیق  ولیمہ  کر نا  مسنو ن  ہے اضا فی  رسم  کے با و جو د  ولیمہ  کی شرعی  حیثیت  اپنی جگہ  قا ئم  و دائم  ہے  جو با عث  اجرو  ثواب  ہے

ان شا ء اللہ  اسی طرح  دعوت ولیمہ  کھا نے  والو ں  سے رقم  وصل  کر نا  بھی اخلا ق  کے مطا بق  نہیں  بلکہ  یہ محض  روا ج  ہے جسے  مٹا نے  کی سعی  کرنی چا ہیے ۔

ھذا ما عندي واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص603

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ