سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(65) بغیر حساب کے جنت میں لے جانےوالا کام

  • 12788
  • تاریخ اشاعت : 2024-02-27
  • مشاہدات : 1266

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کچھ احادیث میں آتا ہے کہ اگر کسی نے فلاں کام کیاتو وہ بغیر حساب کے جنت میں جائے گا۔الاول ؛'' قال الله تعاليٰ يوم القيامة للمجاهدين والشهداء ادخلوا الجنة فيدخلونها بغير حساب ولا عذاب’’ الحاكم(٢/٧٢) وصحهه ووافقه الذهبي ّوالثاني :’’ الذين لا يسترفون ولا يكتورون ولا يتطيرون وعلي ربهم يتوكلون ...يدخلون الجنة بغير حساب ولا عذاب...الخ’’ صحيح البخاري (٦٤٧٢) مسلم(.٢٢)في لايمان والمشكاة بتحقيق الثاني للالباني (٥٢٢٥) والحديث الاخر الحاكم (٧.١٨)وصححه و وافقه الذهبي وبوعوانة (٥/٩٤)

لیکن اگر اس کے ذمہ حقوق العباد  ہوں گے تو وہ کس طرح جنت میں جائےگا۔ نیز قرآن پاک میں آتا ہے کہ جو  چھوٹی نیکی کرے گا اس کی جزا پائے گا۔ اور جو چھوٹی سی بُرائی کرے گا  تو وہ اس کی بھی سزا پائے گا۔پھر بغیر حساب جنت میں کیسے جائے گا؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

حقوق العباد کا معاملہ واقعی بڑا پر خطر ہے لیکن اللہ جب کسی فرد کو بغیر حساب جنت میں لے جانا چاہےگا تو اس کا معاملہ اپنی طرف سے نپٹا  کربلا حساب جنت میں داخل کرنے کی کوئی رکاوٹ یاممانعت نہیں ہوگی۔فی الجملہ  تفصیل کے لئے  ملاحظہ ہو؛(الفتح 3/111) اس صورت میں بلاحساب جنت میں  داخلہ اللہ کی نظر شفقت رحمت خاص اور درگزر سے ہی ممکن ہوگا۔صحیح حدیث میں ہے:

«لن يدخل الجنة احد بعلمه »«لن يدخل الجنة احدا  عمله » قالوا : ولاانت؟ يا رسول الله صلي الله عليه وسلم قال: « ولا انا الا ان يتغمدني الله منه رحمة» صحيح البخاري كتاب الرقاق باب لقصد والمداومة علي العمل عن عائشه رضي الله عنها (٦٤٦٤) الي ٦٤٦٧) صحيح مسلم كتاب صفات المنافقين باب لن يدخل احد الجنة ...(٧١٢٢) واللفظ له عن ابي هريرة وجابر وعائشة رضي الله عنهم

کوئی شخص جنت میں محض اپنے عمل کی بنیاد پر نہیں جائے گا جب تک اللہ اسے اپنے دامان رحمت میں نہ ڈھانپ لےگا۔

ھذا ما عندي واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص240

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ