سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

بیوی کی رضا مندی سے اس کی دبر میں سیکس

  • 12580
  • تاریخ اشاعت : 2014-08-05
  • مشاہدات : 12370

سوال




السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
اگر بیوی کی رضامندی ہو تو کیا اس کے دبر میں سیکس کیا جا سکتا ہے، اور اس کو چوماجا سکتا ہے؟

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اگر بیوی کی رضامندی ہو تو کیا اس کے دبر میں سیکس کیا جا سکتا ہے، اور اس کو چوماجا سکتا ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

بیوی کی دبر میں جماع کرنے سے نبی کریم نے منع فرمایا ہے،اس میں بیوی کی رضا مندی یا عدم رضامندی کا کوئی عمل دخل نہیں ہے۔اگر بیوی رضا مند ہو تو تب بھی دبر میں جماع کرنا حرام ہے،بیوی کی رضا مندی کی صورت میں میاں اور بیوی دونوں گناہ گار ہوں گے۔نبی کریم نے فرمایا:

«مَلْعُونٌ مَنْ أَتَى امْرَأَتَهُ فِی دُبُرِهَا »سنن أبی داود کتاب النکاح باب فی جامع النکاح حدیث نمبر 2162

جو شخص اپنی بیوی سے دبر میں جماع کرے وہ ملعون (لعنت زدہ) ہے۔

جماع کی حدود یہ ہیں کہ حالت حیض اور مقعد میں جماع کرنا منع ہے ،اس کے علاوہ آپ کسی بھی طریقے سے اپنی بیوی سے استمتاع کر سکتے ہیَں۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتوی کمیٹی

محدث فتوی


ماخذ:مستند کتب فتاویٰ