سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(341) بیرون ملک رہنے والے کا بذریعہ ثالثی کونسل طلاق ارسال کرنا

  • 12332
  • تاریخ اشاعت : 2014-06-11
  • مشاہدات : 600

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

میں کویت میں مقیم ہوں میں نے اپنی بیوی کو جو فیصل آباد میں مقیم ہے بذریعہ متعلقہ ثالثی کونسل طلاق ارسال کی ہے کیا ایسا کرنے سے طلاق واقع ہوجائے گی جبکہ میری بیوی نے اسے وصول نہیں کیا؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

شریعت اسلامیہ نے خاوند کو یہ حق دیا ہے کہ سنگین حالات کے پیش نظر میاں بیوی کے درمیان اتفاق و اتحاد کی کوئی صورت باقی نہ رہے تو اسے اپنی زوجیت سے الگ کردے چونکہ صورت مسئولہ میں خاوند نے اپنی بیوی کو طلاق تحریری شکل میں لکھ کر بذریعہ ثالثی کونسل ارسال کردی ہے، لہٰذا وہ واقع ہوگئی ہے۔ عورت نے عدت کے ایام گزارنا ہوتے ہیں، اس لئے اسے طلاق کا علم ضرور ہونا چاہیے۔ بیوی کے طلاق نامہ وصول کرنے یا نہ وصول کرنے سے طلاق کے واقع ہونے پر کوئی اثر نہیں پڑتا۔ البتہ طلاق دینے کا یہ اقدام اگر پہلی دفعہ ہے تو طلاق رجعی شمار ہوگی ۔ دوران عدت خاوند کو رجوع کا حق ہے۔ عدت گزرنے کے بعد بیوی آزاد ہے اسے کسی دوسرے شخص سے نکاح کرنے کی اجازت ہے۔ اگر اسی خاوند سے اتفاق کی کوئی صورت پیدا ہو جائے تو عدت  کے بعد نکاح جدید کرنا ہوگا۔ امام بخاری ؒ اپنی صحیح میں ایک حدیث لائے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:‘‘ اللہ تعالیٰ نے میری امت سے  خیالات  کو معاف کردیا ہے ۔جب تک ان پر عمل نہ ہو یا ان کے مطابق کلام نہ کیا جائے۔’’ (صحیح بخاری،الطلاق:۵۲۶۹)

حافظ ابن حجرؒ اس حدیث کے تحت لکھتے ہیں کہ جو اپنی بیوی کو تحریری شکل میں طلاق دے شرعاً کی طلا ق ہوجائے گی کیونکہ اس نے دل سے ارادہ کیا ، پھر اس کے مطابق تحریری  شکل میں طلاق دے شرعاً اس کی طلاق ہوجائے گی کیونکہ اس نے دل سے ارادہ کیا ، پھر اس کے مطابق تحریری شکل میں اس پر عمل کیا ۔ جمہور اہل علم کا یہی قول ہے۔ (فتح الباری ،ص:۳۹۴،ج۹)

لہٰذا اگر یہ پہلا یا دوسرا واقعہ ہے تو رجعی طلاق ہوگی اور اگر تیسری مرتبہ یہ اقدام کرچکا ہے تو بیوی ہمیشہ کےلئے حرام ہوگئی ہے اب عام حالات میں اس سے رجوع ممکن نہیں ہے۔ (واللہ اعلم)

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

 

فتاوی اصحاب الحدیث

جلد:2 صفحہ:356

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ