سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(219) شب قدر کا تعین

  • 12209
  • تاریخ اشاعت : 2014-06-04
  • مشاہدات : 450

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

احادیث میں شب قدر کی تعیین منقول ہے یا نہیں ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اس کی تعیین  کے متعلق بہت اختلاف ہے۔حافظ ابن حجر ؒ نے تقریباً چالیس اقوال نقل کئے ہیں۔ (فتح الباری،ص:۷۸۴،ج۴)

لیکن صحیح بات یہ ہے کہ شب قدر رمضان کے آخری عشرہ کی طاق راتوں میں ہے، جیسا کہ ارشاد نبوی ہے :‘‘لیلۃ القدر کو رمضان کے آخری عشرہ کی طاق راتوں میں تلاش کرو۔’’(صحیح بخاری،حدیث نمبر:۲۰۱۷)

بعض حضرات نے ستائیسویں رات کو شب قدر  قرار دیا ہے کیونکہ رسول اللہﷺ نے اس کے متعلق فرمایا:‘‘یہ ستائیسویں رات ہے۔’’(صحیح مسلم،الصلوٰۃ:۱۲۳۶)

لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہمیشہ یہی رات شب قدر ہوگی ،ممکن ہے کہ آپ  نے یہ اس وقت فرمایا ہو کہ جس سال ستائیسویں رات کو شب قدر تھی۔ (واللہ اعلم )

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

 

فتاوی اصحاب الحدیث

جلد:2 صفحہ:246

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ