سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(602) تاش اور شطرنج کھیلنا

  • 10976
  • تاریخ اشاعت : 2014-04-07
  • مشاہدات : 640

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

تاش اور شطرنج کھیلنے کے بارے میں کیا حکم ہے جب کہ یہ نماز سے غافل نہ کرتے ہوں ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

جیہ دونوں اوران کی طرح کے دیگر کھیل جائز نہین ہیں کیونکہ یہ آلات لہو سے ہیں ۔ یہ اللہ کے ذکر اور نماز سے روکتے ہیں اور ناحق وقت ضائع کرنے کاسبب بنتے ہیں اور پھر ان کی وجہ سے کھیلنے والوں میں کینہ اور عداوت پیدا ہوتی ہے ۔اور اگر ان میں مالی شرط بھی لگائی جائے تو پھر ان کی حرمت میں اور بھی اضافہ ہوجاتاہے کیونکہ اس صورت میں یہ جوا بن جاتے ہیں ، جس کی حرمت میں قطعا کوئی شک یا اختلاف نیہں ہے ۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ

ج4ص459

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ