سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(26) ایام چھ سات ماہ میں اگر بچہ پیدا ہو اور وقت تولد وہ مردہ ہو..الخ

  • 4217
  • تاریخ اشاعت : 2013-06-15
  • مشاہدات : 519

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایام چھ سات ماہ میں اگر بچہ پیدا ہو اور وقت تولد وہ مردہ ہو، تو اس حالت میں اس کو غسل کفن نماز وغیرہ کا کیا حکم ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

حدیث شریف میں ہے جو بچہ ماں کے پیٹ کے نکل کر آواز دے کر مرے اس کا جنازہ پڑھا جائے جو اتنا بھی نہ ہو، اس کو یونہی دفن کر دینا چاہیے۔ (فتاویٰ ثنائیہ جلد اول ص ۵۴۵)

 

فتاویٰ علمائے حدیث

جلد 05 ص 52

محدث فتویٰ

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ