سرچ انجن کی نوعیت:

تلاش کی نوعیت:

تلاش کی جگہ:

(531) سورۃ الفاتحہ کے بغیر پڑھی گئی نمازوں کا حکم

  • 2199
  • تاریخ اشاعت : 2012-11-11
  • مشاہدات : 815

سوال

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ویب سائٹ پر دیئے گئے سوالات سے اندازہ ہوتاہے کہ سورۃ فاتحہ کے بغیر نماز نہیں ہوتی، تو جو نمازیں سورۃ فاتحہ کے بغیر  پڑھی گئی ہوں، ان کا کیا حکم ہے؟ کیا ان کو دوہرانا پڑے گا؟ ازراہ کرم کتاب وسنت کی روشنی میں جواب دیں۔ جزاکم اللہ خیرا


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

جی ہاں سورۃ الفاتحہ کے بغیر نماز نہیں ہوتی،کیونکہ یہ نماز کا رکن ہے۔نبی کریم ﷺ نے فرمایا:

’’ لا صلاة لمن لم یقرا بفاتحة الکتاب‘‘ (رواه البخاري714)

جس شخص نے سورہ فاتحہ نہ پڑھی اس کی کوئی نماز نہیں ہے۔

لیکن لا علمی میں سورہ فاتحہ کے بغیر پڑھی گئی نمازوں کا حکم ذرا مختلف ہے۔ آپ معذور ہیں اور امید ہے کہ اللہ تعالی آپ کی جہالت کی وجہ سے آپ کی ان نمازوں کا ضرور اجر دے گا۔ آپ نمازیں دہرانے کی بجائے اس غلطی پر اللہ سے معافی مانگیں اور دوبارہ ایسا نہ کریں۔ اب علم ہو جانے کے بعد آپ پر لازم ہے کہ ہر نماز کی ہر رکعت میں سورۃ الفاتحہ ضرور پڑھیں۔

هذا ما عندي والله اعلم بالصواب

فتاویٰ علمائے حدیث

کتاب الصلاۃجلد 1 

ماخذ:مستند کتب فتاویٰ