فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 9403
وی سی آر کی فروخت
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 09 January 2014 11:00 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

میں نے تقریبا اڑھائی سال پہلے فلمیں دیکھنے کے لیےوی سی آر خریدا تھا اور اب تقریبا ایک سال سے میں نے اسے استعمال نہیں کیا۔ میں اس کے خریدنے پر نادم ہوں اور میں اس سے نجات حاصل کرنا چاہتا ہوں۔ سوال یہ ہے کہ میں اس کا کیا کروں کیونکہ میں کسی اور کو اس برائی میں مبتلا نہیں کرتا چاہتا جس میں میں خود مبتلا ہوا ہوں اور کیا اس کے بیچنے میں بھی گناہ ہو گا کیونکہ یہ حرام امور کے لےی استعمال ہوتا ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

زیادہ احتیاط اس میں ہے کہ اسے فروخت نہ کریں کیونکہ اس کا اکثر و بیشتر استعمال برائی ہی کاموں کے لیے ہے، امید ہے اللہ تعالیٰ آپ کو اس کی قیمت کے بجائے خیروبرکت سے نوازے گا کیونکہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے کہ " جو کوئی اللہ تعالیٰ کے لیے کسی چیز کو چھوڑ دے گا تو اللہ تعالیٰ اسے اس سے بہتر عطا فرمائے گا۔"

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

محدث فتوی

فتوی کمیٹی


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)