فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 8141
(247) کیا مسلمان کیلئے جائز ہے کہ وہ کسی یہودی یا عیسائی کوکافر کہے؟
شروع از بتاریخ : 12 November 2013 09:56 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا مسلمان کیلئے جائز ہے کہ وہ کسی یہودی یا عیسائی کوکافر کہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

مسلمان کے لئے جائز ہے کہ کسی یہاودی یا عیسائی کے بارے میں کہ کہ وہ کافر ہے۔ کیونکہ اللہ تعالیٰ نے قرآن مجید میں ان کے لئے اس قسم کے الفاظ استعمال کئے ہیں۔ جوکوئی بھی قرآن کریم غوروفکر کے ساتھ پڑھتا ہے اسے یہ بات معلوم ہے۔ مثلاً ایک مقام پر اللہ تعالیٰ نے فرمایا ہے:

{اِِنَّ الَّذِیْنَ کَفَرُوْا مِنْ اَہْلِ الْکِتٰبِ وَالْمُشْرِکِیْنَ فِیْ نَارِ جَہَنَّمَ خٰلِدِیْنَ فِیْہَا اُوْلٰٓئِکَ ہُمْ شَرُّ الْبَرِیَّة } (البینبة۹۸؍۶)

’’ اہل کتاب اور مشرکین‘ جنہوں نے کفر کیا وہ جہنم کی آگ میں ہوں گے‘ ہمیشہ اس میں رہیں گے‘ یہی لوگ بد ترین مخلوق ہیں۔ ‘‘ یہاں اہل کتاب سے مراد یہودو نصاریٰ ہیں۔

وَبِاللّٰہِ التَّوْفِیْقُ وَصَلَّی اللّٰہُ عَلٰی نَبِیَّنَا مُحَمَّدٍ وَآلِہ وَصَحْبِہ وَسَلَّمَ

اللجنة الدائمة۔ رکن: عبداللہ بن قعود، عبداللہ بن غدیان، نائب صدر: عبدالرزاق عفیفی، صدر عبدالعزیز بن باز

فتویٰ (۴۳۱۹)

 

 

فتاوی بن باز رحمہ اللہ

جلددوم -صفحہ 98

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)