فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 8104
(210) مسیحیوں کو بھائی بنانا حرام ہے
شروع از بتاریخ : 12 November 2013 08:23 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا ہم مسیحیوں کو بالکل اسی طرح اپنے بھائی سمجھ سکتے ہیں جس طرح مسلمانوں کو بھائی سمجھتے ہی؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

{یٰٓأَیُّہَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا لَا تَتَّخِذُوا الْیَہُوْدَ وَالنَّصٰرٰٓی اَوْلِیَآئَ بَعْضُہُمْ اَوْلِیَآئُ بَعْضٍ وَمَنْ یَّتَوَلَّہُمْ مِّنْکُمْ فَاِنَّہ’ مِنْہُمْ اِنَّ اللّٰہَ لَا یَہْدِی الْقَوْمَ الظّٰلِمِیْن} (المائدة ۵/۵۱)

’’اے مومنو! یہودونصاریٰ کو دوست نہ بناؤ۔ وہ ایک دوسرے کے دوست ہیں۔ تم میں سے جو کوئی ان سے دوستی رکھے گا وہ انہیں میں سے ہوگا۔ اللہ تعالیٰ ظالم لوگوں کو ہدایت نہیں دیتا۔ ‘‘

نیز فرمایا:

{اِِنَّمَا الْمُؤْمِنُوْنَ اِِخْوَة } (الحجرات ۴۹/۱۰)

’’(یاد رکھو) سارے مسلمان بھائی بھائی ہیں۔ ‘‘

تو اللہ تعالیٰ نے حقیقی اخوت صرف مومنوں کے لئے ثابت کی ہے۔ جناب رسول اللہ ﷺ سے صحیح حدیث میں مروی ہے کہ آپ نے فرمایا:

(اَلْمُسْلِمْ أَخْو الْمُسْلِمِ لاَ یَظْلِمُہُ وَلاَ یَخْذُلُہُ وَلاَ یَکْذِبُہُ وَلاَ یَحْقِرُہُ)

مسلمان مسلمان کا بھائی ہوتا ہے وہ اس پر ظلم نہیں کرتا‘ اسے بے یارومددگار نہیں چھوڑتا‘ اس سے جھوٹ نہیں بولتا اور اس کی تحقیر نہیں کرتا1

وَبِاللّٰہِ التَّوْفِیْقُ وَصَلَّی اللّٰہُ عَلٰی نَبِیَّنَا مُحَمَّدٍ وَآلِہ وَصَحْبِہ وَسَلَّمَ

اللجنة الدائمة۔ رکن: عبداللہ بن قعود، عبداللہ بن غدیان، نائب صدر: عبدالرزاق عفیفی، صدر عبدالعزیز بن باز

فتویٰ (۲۵۴۰)

---------------------------------------------

1 مسند احمد۲/ ۶۸‘ ۳۶۰۔ صحیح بخاری حدیث نمبر ۲۴۴۲‘ ۶۹۵۱‘ صحیح مسلم حدیث نمبر ۲۵۸۰۔ سنن ابو داؤد حدیث نمبر۴۸۹۳۔ جامع ترمذی حدیث نمبر ۱۴۲۶‘ ۱۹۲۸۔

 

 

فتاوی بن باز رحمہ اللہ

جلددوم -صفحہ 52

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)