فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 785
(69) سموکنگ حرام یا حلال
شروع از بتاریخ : 23 May 2012 01:44 PM

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

سموکنگ حرام یا حلال ؟ اور کیا شراب کی حرمت کی طرح اس کو بھی حرام کہنا صحیح رہے گا ؟ ازراہ کرم کتاب وسنت کی روشنی میں جواب دیں۔جزاکم اللہ خیرا


 

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

سگریٹ نوشی کے نقصانات اس قدر زیادہ ہیں کہ ان کو دیکھتے ہوئے اس کی حرمت میں کوئی شک باقی نہیں رہ جاتا۔ لہٰذا ہر مسلمان کے لیے اس سے بچنا نہایت ضروری ہے۔ اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے:

ولا تلقوا بأيديكم إلى التهلكة (البقرۃ : 195)

’’اور اپنے آپ کو ہلاکت میں نہ ڈالو۔‘‘

دوسری جگہ ارشاد فرمایا:

ولا تقتلوا أنفسكم إن الله كان بكم رحيماً (النساء :29)

’’اور اپنی جانوں کو قتل نہ کرو بلاشبہ اللہ تعالیٰ تم پر رحم کرنے والے ہیں۔‘‘

ڈاکٹرز حضرات کے بقول سگریٹ میں بہت سی مضر صحت چیزیں موجود ہیں۔ اس کے علاوہ اس میں نشہ بھی ہوتا ہے۔ اس لیے سیگریٹ نوشی جائز نہیں ہے۔ واللہ تعالیٰ اعلم

وبالله التوفيق

محدث کمیٹی

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)