فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 668
(133) نیکی اور بدی کا خالق
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 12 May 2012 10:23 AM

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

نیکی اوربدی کا خالق کون ہے ؟ قرآن مجیدمیں ہے کہ خداکے حکم کے بغیرایک ذرّہ بھی نہیں ہلتا توبدی کرنے میں گرفت کیسی۔؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد! 

قرآن مجیدمیں ایسی کوئی آیت نہیں جس کا یہ معنی ہوکہ خداکے حکم کے بغیرایک ذرّہ بھی نہیں ہلتا۔ ہاں کفارسے قرآن مجیدنے یہ حکایت کی ہے ۔

﴿لَوۡ شَآءَ ٱللَّهُ مَآ أَشۡرَكۡنَا وَلَآ ءَابَآؤُنَا وَلَا حَرَّمۡنَا مِن شَيۡءٖۚ﴾--سورة الانعام148

’’اگرخدا چاہتاتو نہ ہم شرک کرتے  نہ کسی شئے کوحرام کرتے۔‘‘

خداتعالی ٰ نے اس کے جواب میں فرمایا:

﴿كَذَٰلِكَ كَذَّبَ ٱلَّذِينَ مِن قَبۡلِهِمۡ حَتَّىٰ ذَاقُواْ بَأۡسَنَاۗ قُلۡ هَلۡ عِندَكُم مِّنۡ عِلۡمٖ فَتُخۡرِجُوهُ لَنَآۖ إِن تَتَّبِعُونَ إِلَّا ٱلظَّنَّ وَإِنۡ أَنتُمۡ إِلَّا تَخۡرُصُونَ ﴾--سورة الانعام148

ترجمہ :۔’’ پہلے لوگوں نے بھی اسی طرح تکذیب کی یہاں تک کہ انہوں نے ہمارے عذاب کا مزہ چکھا۔اے محمد! (صلی اللہ علیہ وسلم ) کہہ دیجئیے۔ کیا تمہارے پاس اس بات پرکوئی دلیل ہے ؟ اگر ہے تواس کوہمارے سامنے پیش کرو۔ تم محض گمان کی تابعداری کرتےہو اورمحض اٹکل کے پیچھے جاتے ہو۔

اس آیت میں خدانے کتنے زور سے تردیدکی ہے کہ جوکچھ تم کرتے ہوخدا نہیں کراتا بلکہ یہ محض تمہارا خیال اورمحض تمہاری اٹکل ہے۔ اس پرتمہارے پاس کوئی دلیل نہیں۔ لیکن خالق ہونا اورشئے ہے اور کاسب (کمانے والا) ہونا اورشئے ہے۔ خداخالق ہے۔ بندہ کاسب(کمانے والا)ہے۔ ان دونوں میں جوکچھ فرق  ہے اس کوپہلے واضح کرچکے ہیں ۔

وباللہ التوفیق

فتاویٰ اہلحدیث

کتاب الایمان، مذاہب، ج1ص174 

محدث فتویٰ



تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)