فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 618
(82) حبوط آدم
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 29 April 2012 02:21 PM

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیاآدم علیہ السلام بوجہ خطاکرنے کے آسمان سےاتارے گئے تھے یازمین پرکسی باغ میں تھے؟ ا زراہِ کرم کتاب وسنت کی روشنی میں جواب دیں جزاكم الله خيرا


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!

الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد! 

مشکوۃ میں حدیث ہے کہ میدان محشرمیں اولین وآخرین جب آدم﷤ کے پاس آکرشفاعت کی درخواست کریں گے اورکہیں گے کہ ہمارے لیے جنت کادروازہ کھلوایئے۔ توآدم ﷤ عذرکریں گے ۔کہ میرے  ہی گناہ نے توتمہیں جنت سے نکالاہےتو اب میں دخول جنت کے لیے کس طرح سفارش کرسکتاہوں ۔یہ حدیث اس بات کی واضح دلیل ہے کہ آدم﷤ اسی جنت میں تھے جس میں اہل ایمان جانے والے ہیں۔

قرآن مجیدمیں ہے:

 ﴿وَلَكُمۡ فِي ٱلۡأَرۡضِ مُسۡتَقَرّٞ﴾--سورة البقرة36

یعنی جنت سے اترنے کاحکم دیکرفرمایاکہ تمہارا زمین میں ٹھکانہ ہے یہ آیت بھی اس بات کی دلیل ہے کہ آدم﷤ اسی جنت میں تھے اگرپہلے ہی سے زمین پرہوتے تویوں کہتے ولکم فی مرضع آخرمستقریعنی تمہاراٹھکانااب دوسری جگہ ہے ۔اہل سنت کابھی یہی مذہب ہے کہ آدم ﷤ اسی جنت میں تھے معتزلہ ایک گمراہ فرقہ گزراہے ۔اس کاخیال ہے کہ آدم﷤ جس جنت میں تھے وہ زمین پرکوئی باغ تھا۔اوراب نیچریوں مرزائیوں کابھی یہی خیال ہے ۔

وباللہ التوفیق

فتاویٰ اہلحدیث

کتاب الایمان، مذاہب، ج1ص160 

محدث فتویٰ



تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)