فتاویٰ جات: مالی معاملات
فتویٰ نمبر : 2726
(387) ایک پیش امام نے زمین رہن لے رکھی ہے کیا اس کے پیچھے نماز جائز ہے یا نہیں؟
شروع از بتاریخ : 09 March 2013 09:47 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

 ایک پیش امام نے زمین رہن لے رکھی ہے کیا اس کے پیچھے نماز جائز ہے یا نہیں؟


 

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

 اگر وہ زمین کی آمدنی کھا رہا ہے اور اسے اصل رقم میں وضع نہیں کرتا تو اسے بتایا جائے کہ یہ سود ہے اور حرام ہے اگر پھر بھی باز نہ آئے تو نماز اس کے پیچھے جائز نہ ہو گی۔ احادیث سے یہی ثابت ہے۔ (اہل حدیث سوہدرہ جلد نمبر ۶، شمارہ نمبر ۲۶)

فتاویٰ علمائے حدیث

کتاب الصلاۃجلد 1 ص 222
محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)